خبریں

بلوچستان پر توجہ آخر کب ؟

بلوچستان ایک ایسا صوبہ ہے جس میں بلوچ پشتون سندھی رہتے ہیں بلوچستان میں کرکٹ کے بعد فٹبال وہ گیم ہے جو زیادہ پسند کیا جاتا ہے بلوچستان میں فٹ بال علمی معیار کا ہے کیوں کے فٹ بال فیفا کے ساتھ لنک ہے پی پی ایل سالانہ ایونٹ ہوتا جو کے ہر ڈیوژن کے ٹیمی شامل ہوتے ہے یہ ایونٹ پاکستان پیٹرولیم لمیٹیڈ کے جانب ہوتا ہے اور کرکٹ میں پی سی بی نے آج تک پسماندہ علاقوں کو ترجی نہیں دے جس کا مثال یہ ہے کا ڈسٹرکٹ ڈیوژن ہیڈ کوارٹر خاران ڈسٹرکٹ واشک آج تک پی سی بی کے ساتھ نہیں اپنے مداد آپ کے ایونٹ کرتے ہیں یا لوکل ٹورنامنٹ ہے یا آل بلوچستان ایونٹ میں نوشکی خضدار چاغی واشک کوئٹہ چمن حب چوکی قلات پنجگور شامل ہوتے خاران واشک کے علاو باقی ڈسٹرکٹز پی سی بی کے ساتھ ہیں پلیئنگ رائٹس ملے ہیں خاران کا گرونڈ تو خاص نہیں لیکن یہاں وہ کراؤڈ ہے کے پورے بلوچستان میں نہیں ہے کوئٹہ میں بھی نہیں ہے بلوچستان کا ہر پلیئر ہو اس نے خاران کی کرکٹ کی تعریف کی ہے لیکن بدقسمتی سے اس پر توجہ نہیں بلوچستان میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں نوشکی پنجگور کے پلیئرقائد اعظم ٹرافی کےلئے کوئٹہ روجن میں کھیلتے رہے ہیں جو کہ پسماندہ علاقوں کا ٹیلنٹ کا موبولتا ثبوت ہے بلوچستان میں ٹیلنٹ کا دوسرا بڑا خزانہ حب چوکی ہے وہاں کے ٹیلنٹ کراچی سے تربیت لیتے ہے کیوں حب چوکی بلوچستان کا آخری حصہ ہے کراچی کے پاس ہے اگر حب چوکی کے ٹیلنٹ کو کراچی کا ٹیلنٹ کہیں تو کوئی غلطی نہیں ہوگی

تحریر لالوخان